هفته,  20 جولائی 2024ء
تیار ہو جائیں ، گاڑیوں کے ٹیکس میں بھی اضافے کی تیاریا ں ،دیکھیں تفصیل

اسلام آباد(روشن پاکستان نیوز)اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نےمقامی طور پر تیار کی جانے والی گاڑیوں پر 25 فیصد سیلز ٹیکس کی منظوری دے دی ہے، جس سے مہنگائی کا سامنا کرنے والے صارفین کے لیے بدھ کو ایک دھچکا ہے۔

کمیٹی کے اجلاس کی صدارت وفاقی وزیر خزانہ، ریونیو اور اقتصادی امور ڈاکٹر شمشاد اختر نے کی۔

منظور شدہ اقدامات کے تحت، مقامی طور پر تیار کی جانے والی گاڑیوں پر 25 فیصد سیلز ٹیکس عائد کیا جائے گا، جس کی قیمت 40 لاکھ روپے یا اس سے زیادہ یا 1400 سی سی سے زیادہ انجن والی گاڑیوں پر عائد کی جائے گی۔

ان فیصلوں کا مقصد حکومتی محصولات کو بڑھانا ہے، پہلے ہی مہنگائی سے دوچار صارفین کے لیے ایک اہم دھچکا ہے۔

کمیٹی نے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کا ایک اور مطالبہ پورا کرتے ہوئے گیس کی قیمتوں میں 65 فیصد سے زائد اضافے کی بھی منظوری دے دی ہے۔ وفاقی کابینہ کی طرف سے حتمی منظوری کا انتظار ہے، اور اگر منظور کیا جاتا ہے، تو اضافہ یکم فروری سے نافذ العمل ہو جائے گا، جس سے محفوظ اور غیر محفوظ صارفین دونوں متاثر ہوں گے۔

عوام پر ٹیکس کا بوجھ بدستور بڑھتا جا رہا ہے، کیونکہ گیس کی قیمتوں میں اضافے سے محفوظ صارفین کو 100 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو اضافے کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، جب کہ غیر محفوظ صارفین کو 300 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو کے اضافے کا سامنا ہے۔ کافی گیس کی کھپت والے افراد کو 900 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو میں خاطر خواہ اضافہ ہوگا۔

مزید یہ کہ سی این جی سیکٹر پر 170 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو کے منظور شدہ اضافے کے ساتھ اضافی بوجھ برداشت کرنا پڑے گا۔ تاہم، محفوظ اور غیر محفوظ دونوں صارفین کے لیے مقررہ چارجز میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔

ای سی سی نے یوریا کھاد بنانے والی تمام کمپنیوں کے لیے یکساں گیس ٹیرف کے اطلاق کی بھی منظوری دے دی ہے، جس سے اس شعبے میں ایک برابری کا میدان متعارف کرایا گیا ہے۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News