بدھ,  19 جون 2024ء
خیراتی نشست نہیں چاہیے،حافظ نعیم کا سندھ اسمبلی کی جیتی ہوئی سیٹ چھوڑنے کا اعلان

کراچی(روشن پاکستان نیوز) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمان نے الیکشن میں دھاندلی کے الزامات پر سندھ اسمبلی کی جیتی ہوئی سیٹ چھوڑنے کا اعلان کر دیا۔


8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات کے نتائج تاخیر سے آنے پر جماعت اسلامی سمیت دیگر جماعتوں کی جانب سے احتجاج کیا جا رہا ہے اور مختلف شہروں میں دھرنے بھی دیے جا رہے ہیں۔


کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حافظ نعیم الرحمان کا کہنا تھا 8 فروری کو بہت سارے پولنگ اسٹیشنز پر وقت پر پولنگ شروع نہیں ہوئی، وقت گزرتا گیا ہم پولنگ شروع نہ ہونے کی شکایات کرتے رہے، عوام کو حق رائے دہی سے محروم کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ آپریشن کرنے والوں نے پہلے کیمرے ہٹائے پھر بکس بھرنا شروع کر دیے، فارم 45 نہیں دیا جا رہا تھا، بڑی تعداد میں پولنگ ایجنٹس کو فارم فراہم نہیں کیے گئے، فارم 47 میں بدترین دھاندلی ہوئی، آر او کے دفاتر کو ہر طرف سے سیل کر دیا گیا۔ تاکہ کوئی پرندہ اڑ نہ سکے۔ہم حقائق عوام کے سامنے لاتے رہیں گے۔


حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں اس بار زیادہ لوگوں نے جماعت اسلامی کو ووٹ دیا، ووٹ یا تو جماعت اسلامی کو گئے یا پھر پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ امیدواروں کو، پورے ملک میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ اس سے بڑھ کر ہے۔ تماشا کچھ نہیں ہے، یہ لاٹھی اور زبردستی کا حکم ہے۔


جماعت اسلامی کراچی کے امیر کا کہنا تھا کہ ہمیں خیراتی نشست نہیں چاہیے، الیکشن کمیشن کے فارم 47 کے مطابق مجھے 26 ہزار ووٹ ملے لیکن فارم 45 کے مطابق مجھے 30464 ووٹ ملے، تحریک انصاف کو زیادہ ووٹ ملے، ہم ان کے ووٹ قبول کرتے ہیں۔ مینڈیٹ. ہم کرتے ہیں، تحریک انصاف کی جیت ہمیں قبول ہے، ایم کیو ایم کونسلر کی سیٹ بھی نہیں جیت سکتی۔


انہوں نے کہا کہ میں یہ اعلان کرنے کی ہمت رکھتا ہوں کہ پی ایس 129 پر آزاد امیدوار جیت گیا ہے، میں پی ایس 129 کی نشست سے استعفیٰ دیتا ہوں، ہمیں ایک بھی اضافی ووٹ کی ضرورت نہیں اور ہم اپنا ایک ووٹ بھی نہیں دینا چاہتے۔ ووٹ کسی کو بھی۔” تیار نہیں.


امیر جماعت اسلامی کراچی نے کہا کہ انہوں نے ہمیں اڑا دیا ہے، اس لیے وہ ہمیں قوم کے دل سے نہیں نکال سکتے، ہم قانونی اور سیاسی جنگ لڑیں گے، آپ جعلی مینڈیٹ سے لوگوں کی سوچ نہیں بدل سکتے۔


یاد رہے کہ حافظ نعیم الرحمان کراچی سے سندھ اسمبلی کے حلقہ 129 سے رکن اسمبلی منتخب ہوئے ہیں، 147 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی غیر سرکاری نتیجے کے مطابق جماعت اسلامی کے حافظ نعیم الرحمان کامیاب قرار پائے تھے۔ 26926 ووٹ لے کر جبکہ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے معز مقدم 20608 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News