بریانی کی ریڑھی پر برتن دھونے والا جج بن گیا

نئی دہلی(روشن پاکستان نیوز)بھارت میں بریانی کی دکان پر برتن دھونے والا نوجوان جوڈیشل سروسز کا امتحان پاس کر کے جج منتخب ہو گیا۔

سوشل میڈیا پر بھارتی نوجوان اس وقت صارفین کی توجہ کا مرکز بن گیا، جب 29 نوجوان کی تصاویر اور ان کی دلچسپ کہانی نے فیس بک پر اپنی جگہ بنانا شروع کی۔بھارتی ریاست اترپردیش کے شہر سمبھائی کے نوجوان محمد قاسم کا تعلق ایک مڈل کلاس گھرانے سے ہے۔

قاسم اپنے والد کے ہمراہ سڑک کنارے بریانی کے ٹھیلے پر ان کی مدد کرتا تھا۔29 سالہ نوجوان والد کے ٹھیلے پر برتن دھونے کا کام کرتا، ساتھ ہی قاسم نے اپنے بہترین مستقبل کے لیے بھی ہار نہیں مانی۔

اترپردیش کے پبلک سروس کمیشن کے سول جج جونئیر ڈویژن کے امتحان میں قاسم نے حصہ لیا تھا، اگرچہ والد کے ٹھیلے پر دن بھر کام کرنا اور پھر امتحان کی تیاری کرنا آسان نہیں تھا۔مگر قاسم کا خواب تھا کہ اپنے والدین کا سر فخر سے بلند کرنا اور انہیں وہ سکون میسر کرنا، اسی خواب کی تعبیر نے نوجوان کو دن رات ایک کرنے پر مجبور کر دیا۔

انتھک محنت اور ہمت نے قاسم کو ٹوٹنے نہیں دیا، اگرچہ قاسم کا تعلق مڈل کلاس فیملی سے تھا، تاہم اس سب میں بھی رات بھر پڑھائی کرنا نہیں چھوڑا، پیسوں کی کمی کے باوجود قاسم نے پڑھائی کو نہیں چھوڑا۔یہی وجہ ہے کہ جب امتحان کے نتائج سامنے آئے تو محمد قاسم نے صوبائی سول سروسز کے امتحان میں 135 واں نمبر حاصل کیا۔

اس طرح اب ایک ٹھیلے پر برتن دھونے والا نوجوان اب ایک اعلی افسر بن کر سب کی توجہ تو حاصل کر ہی رہا ہے، تاہم والدین کا نام بھی روشن کر رہا ہے۔