هفته,  13 جولائی 2024ء
مریم نواز نے پنجاب بیوروکریسی اور پولیس میں سیاسی تقرریوں سے انکار کر دیا

اسلام آباد(روشن پاکستان نیوز) میڈیا رپورٹ کے مطابق مریم نواز کی زیر قیادت پنجاب حکومت نے اپنی اتحادی جماعت پیپلز پارٹی کو آگاہ کیا ہے کہ نون لیگ یا پیپلز پارٹی کے ارکان صوبائی و قومی اسمبلی کی سفارش پر صوبائی سول انتظامیہ میں سیاسی تقرریوں کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ نون لیگ اور پیپلز پارٹی کے درمیان پنجاب میں مسائل کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات میں شامل ایک ذریعے کے مطابق، سویلین بیوروکریسی میں سیاسی تقرریوں کی حوصلہ شکنی کے صوبائی حکومت کے فیصلے پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق، ان مذاکرات میں پیپلز پارٹی نے بھی معقول رویے کا اظہار کیا۔ پیپلز پارٹی اپنے اس مطالبے پر قائم نہیں رہی کہ پنجاب کے جن علاقوں میں پیپلز پارٹی نے فروری 2024ء کے الیکشن میں کامیابی حاصل کی ہے وہاں سول انتظامیہ اور پولیس کی تقرریوں میں اسے حصہ دیا جائے۔ کہا جاتا ہے کہ پیپلز پارٹی کو یقین دلایا گیا کہ سول انتظامیہ اور پولیس میں تقرریاں نون لیگ کے کسی رکن قومی یا صوبائی اسمبلی کی سیاسی مداخلت کے بغیر میرٹ پر کی جائیں گی۔ بجٹ کے حوالے سے کچھ معاملات ایسے تھے جن کی وجہ سے پیپلز پارٹی پریشان ہوئی ہے لیکن لیکن پارٹی کو ایک سنگین تشویش پنجاب کے بارے میں تھی جہاں اسے سیاسی جگہ نہ ملنے کی شکایت ہے، نون لیگ کی حکومت کے قیام کیلئے جس وقت پیپلز پارٹی نے حکومت کا حصہ بننے کا فیصلہ کیا تھا اسے اس حوالے سے مبینہ طور پر یقین دہانی کرائی گئی تھی۔ پیپلز پارٹی پنجاب کی بیوروکریسی میں تقرریوں میں اپنا حصہ چاہتی تھی بالخصوص ان اضلاع میں جہاں پیپلز پارٹی کی پارلیمانی موجودگی ہے۔ تاہم مریم نواز پارٹی وابستگی سے قطع نظر سیاستدانوں کی سفارشات کی بنیاد پر بیوروکریسی میں تبدیلیاں کرنے کو تیار نہیں۔ کہا جاتا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب نے اپنی پارٹی کے ارکان اسمبلی کو بھی واضح بتا دیا ہے کہ سول انتظامیہ اور پولیس میں کوئی سیاسی مداخلت قبول نہیں۔ وزیراعلیٰ کے اس فیصلے نے نہ صرف نون لیگ کے کئی ارکان قومی و صوبائی اسمبلی پریشان ہیں بلکہ یہ پنجاب سے پیپلز پارٹی کے ارکان قومی و صوبائی اسمبلیوں کیلئے بھی پریشان کن ہے۔ میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ دونوں جماعتوں کی حالیہ بات چیت کے میں ان کے درمیان پیدا ہونے والے مسائل کو ختم کرنے کے لیے، نون لیگ نے پیپلز پارٹی کو ان علاقوں میں سول انتظامیہ اور پولیس میں اپنی پسند کی تقرریوں کی اجازت دینے پر اتفاق کیا تھا جہاں پیپلز پارٹی نے الیکشن جیتا تھا۔ تاہم، ذرائع کا کہنا تھا کہ نون لیگ اور پیپلز پارٹی کے درمیان پنجاب پر حالیہ بات چیت کے دوران ایسا کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکا۔ ذرائع کے مطابق، وزیر اعلیٰ پنجاب نون لیگ کے کے ارکان اسمبلی کو انتظامی معاملات میں مداخلت کی اجازت دے رہی ہیں اور نہ پیپلز پارٹی کیلئے ایسی کوئی رعایت پیدا کی جائے گی۔

مزید پڑھیں: کوئی بیوقوف ہی سمجھتا ہوگا کہ عمران خان کو رہا کیا جائے گا، شیخ رشید

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News