علی امین گنڈا پور کی وزیر اعلیٰ نامزدگی پر پی ٹی آئی میں اختلافات جنم لینے لگے

اسلام آباد(روشن پاکستان نیوز)علی امین گنڈا پور کی وزیر اعلیٰ نامزدگی پر پی ٹی آئی میں اختلافات سامنے آگئے۔

ذرائع کے مطابق اسد قیصر، مشتاق غنی، عاطف خان اور علی امین گنڈا پور کی نامزدگی سے ناخوش ہیں۔

وزارت اعلیٰ کے معاملے پر پی ٹی آئی میں 3 گروپ بن گئے، مشتاق غنی، علی امین گنڈا پور اور عاطف خان گروپ میٹ بن کر یا خود وزیر اعلیٰ بننا چاہتے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بانی پی ٹی آئی نے علی امین گنڈا پور کو نامزد کیا، عاطف خان نے بھی ٹکٹوں کی تقسیم پر تحفظات کا اظہار کیا، پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم پر عاطف خان کو نظر انداز کیا گیا۔

عاطف خان نے سوشل میڈیا پر اپنے بیانات میں علی امین گنڈا پور کو وزیر اعلیٰ نہ بنانے کا عندیہ دیا تھا، انہوں نے بانی پی ٹی آئی سے کسی اچھی شہرت کے حامل شخص کو وزیر اعلیٰ بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔

عاطف خان نے بیانات میں پرویز خٹک اور محمود خان کی مخالفت کا بھی حوالہ دیا۔ عاطف خان نے کہا کہ پرویز خٹک اور محمود خان کی مخالفت پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔

بانی پی ٹی آئی کو بعد میں احساس ہوا کہ عاطف خان پرویز خٹک اور محمود خان کے بارے میں درست تھے، عاطف خان وزیراعلیٰ کی دوڑ سے باہر تھے کیونکہ انہوں نے صوبائی نشست نہیں لڑی۔

پی ٹی آئی رہنما ظاہر شاہ طورو نے کہا کہ وزیراعلیٰ کے نام پر سب متفق ہیں اور کوئی اختلاف نہیں ہے۔

سپیکر خیبرپختونخوا اسمبلی مشتاق غنی نے کہا کہ وزارت اعلیٰ کے حوالے سے بانی پی ٹی آئی کا فیصلہ قبول ہے۔