نتائج میں تاخیر کا مطلب ہم جانتے ہیں،نتائج تسلیم کرتے ہیں، تاخیر کا جواز نہیں، شیری رحمان

اسلام آ باد (روشن پاکستان نیوز)پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ آج صبح 10 بجے تک نتائج آنا چاہیے تھے لیکن نہیں آئے۔ انتخابی نتائج میں تاخیر کا مطلب ہم جانتے ہیں۔

سینیٹر شیری رحمان نے اپنے بیان میں کہا کہ 87 فیصد نتائج آنے کے بعد ہمارے چیف پولنگ ایجنٹ کو صبح 6 بجے کمرے سے باہر نکال دیا گیا، ہم درخواست لے کر لاہور ہائی کورٹ گئے، ہمیں دروازہ کھول کر کھیلنا ہے۔

شیری رحمان نے کہا کہ بلاول کو لاہور میں واضح برتری حاصل ہے، وہ ہر چینل پر نظر آئے، لاہور کسی جاگیرنہیں، پورے پاکستان کو ہمارے ووٹرز کے لیے کھلا ہونا چاہیے، ہم بات کریں گے اور سوال اٹھائیں گے، ایسا نہیں ہے۔ آپ لوگوں کے ساتھ. ووٹ کا حق چھین لیں۔

انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو لاہور میں جیت رہے تھے، پھر نتائج رک جاتے ہیں اور بدلنا شروع ہو جاتے ہیں، لیڈ بدلتی ہے اور آزاد آتا ہے، ہم نے ایک ایپ بنائی اور اس پر 63 ہزار ووٹ تلاش کیے گئے۔

شیری رحمان نے کہا کہ آج صبح 10 بجے تک نتائج آنا چاہیے تھے لیکن نہیں آئے، جو نتائج آئے ہمیں قبول ہے لیکن تاخیر کا جواب نہیں، آر او تک رسائی درست ہے، فارم 45 دیا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جب پارلیمنٹ میں الیکشن ہوتا ہے تو سب مل کر بیٹھتے ہیں، سب سے مذاکرات ہوتے ہیں، جمہوریت صرف جھنڈا لہرانے کی بات نہیں۔