پولیس نے قتل اور زخمی ہونے والے افراد کیساتھ مقامی نوسربازوں کے ساتھ ملکر غلط ایف آئی آر درج کی۔چوہدری عابد رضا

کھاریاں(سٹی رپورٹر)میڑو سٹی سرائے عالمگیر کے گارڈز کی فائرنگ سے علاقہ میں دہشت پھیلنا اس حکومت کی ناکامیوں کا منہ بولتا ثبوت ہے جبکہ جو کہتے تھے ہم پولیس اصلاحات لائیں گے اصلاحات تو دور کی بات ان کے اپنے کارکن انصاف کے لیے روتے پھرتے ہیں۔اس واقعے کے بعد لوگوں میں خوف کی لہر دوڑ چکی ہے،ان خیالات کا اظہارچوہدری عابد رضا صدر پاکستان مسلم لیگ نواز گجرانوالہ ڈویزن/ممبر قومی اسمبلی حلقہ این اے 71 نے اپنے ایک جاری کردہ بیان میں کیا انھوں نے کہا پولیس نے قتل اور زخمی ہونے والے افراد کے ساتھ مقامی نوسر بازوں سے ساز باز کرکے دھوکہ کیا ہے ۔ایف آئی آر ہی غلط درج کی ہے، جبکہ عام روٹین کے مقدمات کو دہشت گردی کے مقدمے میں تبدیل کرنے میں مہارت رکھتے ہیں ۔ چوہدری عابد رضانے کہا مجھے حیرت ہے ایک قیمتی جان کا ضیاع ہو گیا جبکہ چھ کے قریب افراد زخمی ہونا اور پھر پولیس کا ایسی دفعات لگانا انصاف حکومت کے منہ پر تماچہ ہے ۔ان افراد میں ایک ضعیف العمر خاتون بھی شامل ہے ۔انکی ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات کیوں شامل نہیں کی گئی ،فائرنگ سے علاقہ میں خوف وہراس پھیلا ہوا ہے ۔پولیس نے مظلوم کی بجائے ظالمین کا ساتھ دیا پھر کہتے ہیں ہم کرپشن فری پاکستان بنائیں گے جبکہ پولیس کے راشی افسران کی چاندی ہے ۔ہم اس امر کی پرزور مذمت کرتے ہیں ایف آئی آر میں اصل ملزمان کا نام تک نہیں ہے ۔ہم مظلوموں کے ساتھ ہیں ہماری حکومت آنے کے بعد ان تمام نوسربازوں سے ایک ایک ظلم کا حساب لیا جائے گا اس موقع پر راہنما مسلم لیگ نواز سرائے عالمگیر راجہ محمد اسلم، راہنما مسلم لیگ نواز کھاریاں حاجی محمد اسلم خان کےعلاوہ حاجی رزاق خان کے ہمراہ چوہدری عابد رضا نے مطالبہ کیا کے ایف آئی آر میں 7ATA کو بھی شامل کیا جائے اور اصل ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچا کر یہ ثابت کریں کے ہم سب واقعی انصاف کی حکومت میں انصاف کے ٹھاٹھیں مارتے سمندر سے محفوظ ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں