خیبرپختونخوا میں مورثی سیاست کا راج،بڑے گھرانوں کے بچے انتخابی دنگل میں کود پڑے

اسلام آباد(روشن پاکستان نیوز) ملک میں 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات میں بھی موروثی سیاست غالب نظر آ رہی ہے۔

خیبر پختون خوا میں بڑے سیاسی خاندانوں نے والد، بیٹے، بھائی اور قریبی رشتے داروں کو انتخابی میدان میں اتارا ہے۔

مولانا فضل الرحمٰن، اکرم خان درانی، پرویز خٹک، اسد قیصر اور امیر مقام نے اپنے بچوں، بھائیوں اور قریبی رشتے داروں کو ٹکٹوں سے نوازا ہے۔

جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن آبائی علاقے ڈیرہ اسماعیل خان سے قومی اسمبلی کی نشست پر امیدوار ہیں جبکہ ان کے 2 بھائی مولانا عبید الرحمٰن اور مولانا لطف الرحمٰن بھی وہیں سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

مولانا فضل الرحمٰن کے 2 بیٹے مولانا اسعد محمود اور مولانا اسجد قومی اسمبلی کی نشستوں کے لیے انتخابی دنگل میں موجود ہیں۔

علاوہ ازیں خواتین کی مخصوص نشستوں پر خواہر نسبتی شاہدہ اختر علی کو قومی اسمبلی اور ریحانہ اسماعیل کو صوبائی اسمبلی کے لیے ٹکٹ جاری کیا گیا ہے۔

سابق وزیرِ اعلیٰ اکرم خان درانی بنوں سے صوبائی اسمبلی کی 2 نشتوں پر قسمت آزما رہے ہیں جبکہ ان کے بیٹے زاہد اکرم درانی جے یو آئی کے ہی ٹکٹ پر قومی اسمبلی کی سیٹ کے لیے میدان میں ہیں۔

سابق وزیرِ اعلیٰ اور تحریکِ انصاف پارلیمنٹیرینز کے چیئرمین پرویز خٹک نے بھی ورکرز کو پیچھے دھکیل کر ٹکٹ اپنوں میں ہی بانٹے ہیں۔

پرویز خٹک نوشہرہ سے قومی اسمبلی جبکہ ان کے بیٹے ابراہیم خٹک اور اسماعیل خٹک صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر اور داماد عمران خٹک بھی قومی اسمبلی کے لیے قسمت آزمائی کر رہے ہیں۔

ارباب فیملی میں بھی موروثی سیاست

سابق وزیرِ اعلیٰ ارباب جہانگیر (مرحوم) کے فرزند سابق وفاقی وزیر ارباب عالمگیر اور ان کی اہلیہ عاصمہ عالمگیر دونوں الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔ 

ارباب عالمگیر کے بیٹے ارباب زرک خان پشاور سے صوبائی اسمبلی کی نشست پر پی پی پی کے امیدوار ہیں۔

علی امین گنڈاپور نے بھی اپنوں میں ہی ٹکٹ تقسیم کیے

تحریک انصاف کے صوبائی صدر علی امین گنڈاپور نے بھی اپنوں میں ہی ٹکٹ تقسیم کیے ہیں۔

علی امین گنڈا پور کے بھائی فیصل امین بھی الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

سابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور ان کے بھائی عاقب اللّٰہ بھی صوابی سے پی ٹی آئی کی طرف سے میدان میں ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما عمر ایوب اور ان کے کزنز بھی قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر امیدوار ہیں۔

علاوہ ازیں نواز لیگ کے امیر مقام اور ان کے بھائی ڈاکٹر عباد سوات اور شانگلہ سے کھڑے ہوئے ہیں۔

قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد خان شیر پاؤ اور اور ان کے صاحبزادے اسکندر شیر پاؤ چارسدہ سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔