منگل,  23 جولائی 2024ء
پاک فوج کے 6 ماہ میں 22714 آپریشن، 111 جوان شہید، 354 دہشتگرد ہلاک

پشاور(روشن پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں گذشتہ چھ ماہ کے دوران دہشت گردی کے 1063واقعات ہوئے۔ اس دوران پاک فوج نے22714آپریشن کئے جس میں فوج کے 111جوان اور افسر شہید ہوئے جبکہ 354دہشت گرد ہلاک ہوئے ۔خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں دہشت گردی کے 1063واقعات ، پاک فوج ہر روز 126آپریشن کررہی ہے، ہر گھنٹے میں پانچ آپریشن جاری ،قوم دہشت گردی سے اور لڑتی فوج دہشت گردوں کے خلاف لڑتی ہے ،KPمیں انسداد دہشت گردی کی 13عدالتیں ہیں، اسمگلنگ، نان کسٹم پیڈ گاڑیوں، تمباکو کے غیر قانونی کاروبار سے پیسہ اکٹھا کیاجاتا ہے، ڈالرز میں بیرون ملک بھجوا یا جاتا ہے،اعلیٰ سیکورٹی حکام نے ان کیمرہ بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاک فوج ہر روز126آپریشن کر رہی ہے یوں ہر گھنٹے میں5آپریشن ہوتے ہیں جن میں دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کی جاتی ہے لیکن اس کے باوجود دہشت گردی کے واقعات رونما ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قوم دہشت گردی سے لڑتی ہے جبکہ فوج دہشت گردوں کے خلاف لڑتی ہے ۔اعلیٰ فوجی افسر کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا میں انسداد دہشت گردی کی 13عدالتیں کام کر رہی ہیں جبکہ بلوچستان میں9عدالتیں قائم ہیں اسی طرح پنجاب میں23اور سندھ میں32عدالتیں موجود ہیںحالانکہ دہشتگردی کے واقعات خیبرپختونخو ا اور بلوچستان میں ہورہے ہیں ۔انھوںنے کہا کہ روزانہ 126اور ہر گھنٹے میں5آپریشنز اورشہادتوں کے باوجود دہشتگردی کے واقعات ہورہے ہیں اس کا مطلب ہے کہ ان کی مالی معاونت ہورہی ہے انھیں وسائل فراہم کئے جارہے ہیں تاکہ ملک میں جاری دہشتگردی ختم نہ ہو۔

مزید پڑھیں: آپریشن عزم استحکام فوج نہیں ہماری ضرورت ہے: خواجہ آصف

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News