جمعه,  19 جولائی 2024ء
طالبان کو لانے والے آپریشن عزم استحکام کی مخالفت کر رہے ہیں، عطاتارڑ

اسلام آباد (روشن پاکستان نیوز)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطا تارڑ نے کہا ہے کہ آپریشن عزم استحکام سے ہمیں ملک کو محفوظ بنانا ہے لیکن طالبان کو لانے والے آپریشن کی مخالفت کر رہے ہیں۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے عطا تارڑ نے کہا کہ ہفتے کو عزم استحکام کی منظوری ہوئی، عزم استحکام کابینہ میں بھی آیا اور ایوان میں بھی، سوال تو یہ ہے کہ طالبان کو کون واپس لے کر آیا تھا، گڈ طالبان اور بیڈ طالبان کی بحث کون لایا تھا، میت گھر آتی ہے تو کہرام کا اندازہ نہیں لگایا جا سکتا۔

خیال رہے کہ عطا تارڑ کی تقریر کے دوران اپوزیشن نے شور شرابا کیا۔ اس موقع پر وفاقی وزیر نے کہا کہ یہ طالبان کے حق میں نعرے لگ رہے ہیں، یہاں بیٹھ کر اپنے لیڈر کو خوش آمد نہ کریں، اپوزیشن گالم گلوچ کے بجائے اچھی تجاویز دے، سمجھتا تھا کہ قابلیت کا فقدان ہے، مگر نیت کا بھی فقدان ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کیا اعتراض تنخواہیں بڑھانے پر ہے، کیا اعتراض صنعتوں کی بجلی کے نرخ کم کرنے پر ہے، شور شرابا کیا جا رہا ہے، کوئی شیڈ و بجٹ پیش کرے، گزشتہ روز جو کچھ ایوان میں ہوا وہ نہیں ہونا چاہیےتھا۔

بجٹ پر بات کرتے ہوئے انھوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی دور میں ہم شیڈ و بجٹ پیش کرتے تھے، بحث کرنا آسان ہے، شیڈو بجٹ تیار کرنا مشکل ہے، افسوس ہے کہ صرف تنقید برائے تنقید کی جارہی ہے، شیڈ و بجٹ میں بہتر تجاویز دی جاسکتی تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ فریال تالپور کو اسپتال سے گرفتار کیا گیا، وہ نہیں بھاگیں، لیکن فواد چوہدری ایسے بھاگے کہ رکنےکا نام نہیں لیا۔

عطا تارڑ نے یہ بھی کہا کہ کیا اقلیتوں کے تحفظ کیلئے قرار داد منظور نہیں ہونی چاہیے، اپوزیشن نے اقلیتوں کے تحفظ کی قرارداد کی مخالفت کی۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News