اتوار,  23 جون 2024ء
بشریٰ بی بی کے سابقہ و موجودہ شوہر عدالت میں لڑپڑے

اسلام آباد (روشن پاکستا ن نیوز) غیرشرعی نکاح کیس میں دوران سماعت بشری بی بی کے سابقہ و موجودہ شوہر عمران خان اورخاور مانیکا آپس میں لڑ پڑے، لڑائی میں بشریٰ بی بی بھی کود پڑیں، سابق شوہر کو لعن طعن کرتی رہیں،خاور مانیکا نے کہا عمران نے میرا گھر تباہ کردیا۔

بانی پی ٹی آئی نے خاور مانیکا سے کہا تم سے نہیں جج سے بات کررہا ہوں،شادی سے پہلے ناجائز تعلقات نہیں تھے،عمران خان قرآن پر حلف لینے کی ضد کرتے رہے۔

خاور مانیکا نے حلف کی پیشکش قبول کرتے ہوئے کہا تم جھوٹ بول رہے ہو، خدا سے ڈرو، جبکہ دوران جرح بشری بی بی کے وکیل مشتعل ہوگئے اور خاور مانیکا کو دھمکی دی کہ مکا مار دوں گا، عدالت سے باہر پھینکنے کی بھی دھمکی دی جس پر جج قدرت اللہ نے انتباہ کیا کہ سختی پر مجبور نہ کریں،فاضل جج نے کہا کہ خاور مانیکا اگر قرآن پر حلف دیتا ہے تو آپ کا جرح کا حق ختم ہوجائے گا جس پر بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ خاور مانیکا سے جرح ضروری ہے۔

عدالت سے باہر جاتے ہوئے بانی پی ٹی آئی کی بہنوں نے خاور مانیکا پر یہ جملہ کس دیا کہ ”یہ کیا گند کیا ہے؟“ جس پر خاور مانیکا نے بانی پی ٹی آئی کی بہنوں کو جواب دیا کہ آپ کی نسل گندی ہے ، اس نے گند کیا ہے ، اسی نے خراب کیا ہے،عمران ایک شیطان شخص ہے، تفصیلات کے مطابق بانی پی ٹی آئی عمران خان اور بشریٰ بی بی کیخلاف عدت کے دوران نکاح کیس کی سماعت آج تک ملتوی کر دی گئی۔

دوران سماعت چار گواہوں کے بیانات قلمبند اور دو پر جرح مکمل کی گئی۔ بشریٰ بی بی کے سابق اور موجودہ شوہر کے درمیان تلخ کلامی، بشریٰ بھی بیچ میں کود پڑیں۔

بشریٰ بی بی کے وکیل عثمان گل دوران جرح خاور مانیکا سے لڑ پڑے، مکا مارنے کی کوشش بھی کی، خاور مانیکا نے قرآن پر ہاتھ رکھ کر حلف دینے کی پیشکش کو قبول کرلیا، جرح کے دوران آبدیدہ ہوگئے۔

جمعرات کو سینئر سول جج قدرت اللہ نے اڈیالہ جیل میں عمران خان اور بشریٰ بی بی کیخلاف دوران عدت نکاح کیس کی طویل سماعت کی جو ساڑھے دس گھنٹے پر محیط تھی۔

سماعت کے دوران چار گواہان شکایت کنندہ خاور مانیکا، نکاح خواں مفتی سعید، گواہ عون چوہدری اور خاورمانیکا کے ملازم لطیف کا بیان قلمبند کیا گیا جبکہ بشریٰ بی بی کے وکیل عثمان گل نے خاورمانیکا اور عون چوہدری پر جرح مکمل کی۔ جس کے بعد فاضل عدالت نے مزید سماعت آج تک ملتوی کردی۔ آج دو باقی گواہان پر بشریٰ بی بی کے وکیل عثمان گل جبکہ بانی پی ٹی آئی کے وکیل سلمان اکرم راجہ چاروں گواہوں پر جرح کریں گے۔ جمعرات کو سماعت کے دوران بانی پی ٹی آئی عمران خان اور خاورمانیکا کے درمیان تلخ کلامی ہوگئی۔

بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ میں اور میری بیوی قرآن پر حلف دینے کو تیار ہیں کہ ہمارے درمیان ناجائز تعلقات نہیں تھے، میں اپنی بیوی کو کلیئر کرنا چاہتا ہوں۔ اس موقع پر بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی جج کے سامنے پہنچ گئے۔

بشریٰ بی بی نے کہا کہ میرے بیان کے بغیر عدالت کوئی فیصلہ نہیں کرسکتی، بیان کے بغیر عدالت کوئی سزا نہیں سنا سکتی، منافق اور شیطان کو قرآن میں برا کہا گیا ہے۔

اس پر خاور مانیکا بھی جج کے سامنے پہنچ گئے اور بشریٰ بی بی کیساتھ تلخ کلامی شروع کردی۔

خاور مانیکا نے بشریٰ بی بی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ بچے سوال کر کرکے تھک گئے مگر تم نے جواب نہیں دیا، چھوٹی بیٹی رات کو اٹھ اٹھ کر روتی ہے، میرا گھر اور بچے برباد کردیئے۔

بانی پی ٹی آئی عمران خان نے خاور مانیکا کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ چھ سال بعد یاد آیا ہے؟ عدالت قرآن منگوائے ہاتھ رکھ کر حلف دیں گے، خاورمانیکا بھی قرآن پر ہاتھ رکھے۔

بشریٰ بی بی کو نکاح کے دن دیکھا ہے۔ قرآن لائیں میں اٹھانے کو تیار ہوں۔ اس پر خاور مانیکا نے کہا کہ تم جھوٹ بول رہے ہو، خدا سے ڈرو، تم نے میرا گھر برباد کیا۔ تم سے نہیں جج سے بات کررہا ہوں، بانی پی ٹی آئی نے عدالت سے قرآن پاک پر حلف لینے کی ضد کی جس پر بانی پی ٹی آئی اور خاور مانیکا دونوں قرآن پر حلف کو تیار ہوگئے۔

فاضل جج نے کہا کہ خاور مانیکا اگر قرآن پر حلف دیتا ہے تو آپ کا جرح کا حق ختم ہوجائے گا۔ اس پر بانی پی ٹی آئی نے کہا کہ خاور مانیکا پر جرح ضروری ہے، اینٹی کرپشن کی حراست میں خاور مانیکا کا سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہوا۔ دوران جرح خاور مانیا نے وکیل صفائی عثمان گل سے کہا کہ مجھ سے ایسے سوالات کررہے ہو جیسے ان پڑھ ہو۔

اس پر عثمان گل غصے میں آگئے اور کہا کہ میں تمہیں اٹھا کر باہر پھینک دوں گا۔ عثمان گل ایڈووکیٹ نے خاور مانیکا کو مکا مارنے کی بھی کوشش کی۔خاور مانیکا نے کہا کہ وکیل پی ٹی آئی ایکٹویسٹ بنے ہوئے ہیں۔ عثمان گل ایڈووکیٹ نے کہا کہ جرح کرنا میرا حق ہے۔

جج قدرت اللہ نے کہا کہ اگر آپ گواہ کو مکا مارنے کی کوشش کریں گے تو جرح کیسے چلے گی، ہم محبت سے چل رہے ہیں، سختی پر مجبور نہ کریں۔

عدالت نے عثمان گل کو جرح جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی جس پر عثمان گل ایڈووکیٹ نے کہا کہ عدالت نہیں کہہ سکتی کے جرح 15 منٹ میں مکمل کریں۔ فاضل جج نے کہا کہ اگر آپ نے غیر متعلقہ سوالات کا سلسلہ جاری رکھا تو جرح کا حق ختم کر دوں گا، جتنا وقت آپ کو جرح کیلئے دیا ہے اتنے میں چار گواہوں پر جرح مکمل ہوسکتی تھی۔جرح دوبارہ شروع ہونے پر خاور مانیکا نے کہا کہ یہ درست ہے کہ عمران خان عدم موجودگی میں میرے گھر آتے اور ان دونوں کے غیرشرعی تعلقات تھے، مجھے معلوم نہیں کہ غیرشرعی تعلقات پر ملک کا قانون کیا کہتا ہے، یہ درست ہے کہ 2018 سے نومبر 2023 تک اس جرم سے متعلق کوئی شکایت درج نہیں کرائی، یہ بھی درست ہے کہ میں نے اینٹی کرپشن کے مقدمہ میں رہا ہونے کے 10 دن بعد شکایت فائل کی، یہ درست نہیں کہ میں نے شکایت اسٹیبلشمنٹ کے کہنے پر دائر کی، یہ بھی درست نہیں ہے کہ بشریٰ بی بی نے عدت پوری کرنے کے بعد نکاح کیا۔ جرح کے دوران خاور مانیکا آبدیدہ ہوگئے۔

اس پر وکیل صفائی عثمان گل نے عدالت سے بار بار خاور مانیکا کے آبدیدہ ہونے کو ریکارڈ پر لانے کی استدعاکر دی۔

خاور مانیکا نے کہا کہ عمران خان اور بشریٰ بی بی کے نکاح کا علم ٹی وی پر خبروں سے ہوا۔ جرح کے دوران عمران خان اور خاور مانیکا میں تلخ جملوں کے بعد خاور مانیکا عدالت سے باہر چلے گئے۔

عدالت سے باہر جاتے ہوئے بانی پی ٹی آئی کی بہنوں نے خاور مانیکا پر یہ جملہ کس دیا کہ ”یہ کیا گند کیا ہے؟“ جس پر خاور مانیکا نے بانی پی ٹی آئی کی بہنوں کو جواب دیا کہ آپ کی نسل گندی ہے ، اس نے گند کیا ہے ، اسی نے خراب کیا ہے۔ بعد ازاں خاور مانیکا واپس آ گئے اور جرح مکمل کی گئی۔ خاور مانیکا پر جرح مکمل ہونے کے بعد تین مزید گواہوں مفتی سعید ، عون چوہدری اور محمد لطیف نے اپنے اپنے بیانات قلمبند کرائے۔

بشریٰ بی بی کے وکیل عثمان گل نے عون چوہدری پر بھی جرح مکمل کر لی جس پر عدالت نے مزید سماعت آج تک ملتوی کر دی۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News