منگل,  23 جولائی 2024ء
نوجوان پر ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے تباہ کن اثرات،میسجنگ ایپ پر پابندی، 16 سالہ لڑکی نے خودکشی کر لی

 

ڈومبیولی(روشن پاکستان نیوز)ڈومبیولی میں ایک دل دہلا دینے والا واقعہ سامنے آیا، جہاں ایک 16 سالہ لڑکی نے اپنے کمرے کی چھت سے لٹک کر اپنی جان لے لی۔یہ افسوسناک موڑ اس وقت آیا جب اس کے والد نے اسے اپنے موبائل فون پر میسجنگ ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے سے منع کیا۔

مقامی حکام کے مطابق، لڑکی کے والد نے اسے سنیپ چیٹ ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ نہ کرنے کی ہدایت کی تھی، اس فیصلے نے اسے شدید پریشانی میں ڈال دیا۔ اس کی ہدایت کے باوجود، لڑکی پہلے ہی اپنے ڈیوائس پر ایپلی کیشن انسٹال کرنے میں کامیاب ہو چکی تھی۔مانپاڈا پولیس اسٹیشن کے ایک افسر نے وضاحت کرتے ہوئے کہا، “یہ واقعہ جمعہ کی دیر رات نیلجے علاقے میں پیش آیا۔” “اس کے والد کی درخواست کو حذف کرنے کی ہدایت نے اس پر گہرا اثر ڈالا تھا۔”

افسوسناک بات یہ ہے کہ لڑکی کے گھر والوں کو اگلی صبح اس کی بے جان لاش ملی، جس نے اپنے بیڈ روم کی چھت سے لٹک کر اپنی جان لے لی۔افسوسناک خبر ملتے ہی پولیس نے فوری مداخلت کرتے ہوئے اس کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا جبکہ حادثاتی موت کا مقدمہ درج کر لیا۔

یہ تباہ کن واقعہ والدین اور بچوں کے تعلقات میں درپیش پیچیدگیوں اور چیلنجوں کو نمایاں کرتا ہے،خاص طور پر نوجوان زندگیوں پر ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے اثرات سے متعلق ۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News