اتوار,  23 جون 2024ء
چینی مشن کا چاند کے تاریک حصے سے نمونے جمع کرنے کے بعد زمین پر واپسی کا سفر شروع

 

چین (روشن پاکستان نیوز)چین کے Chang’e 6 مشن نے چاند کے قطب جنوبی سے نمونے اکٹھے کرکے زمین پر واپسی کا سفر شروع کردیا ہے۔ پہلی بار دنیا کا کوئی ملک چاند کے اس پراسرار خطے سے نمونے اکٹھا کر کے زمین پر لا رہا ہے۔ خلائی پروگرام بہت ترقی کر رہا ہے۔

چائنہ نیشنل اسپیس ایڈمنسٹریشن (سی این ایس اے) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق چینگ ای 6 مشن کا لینڈر چاند کی سطح سے پرواز کرتے ہوئے قمری مدار سے رابطہ قائم کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔

اس طرح یہ چاند کے اس تاریک پہلو سے کامیابی کے ساتھ ٹیک آف کرنے والا پہلا خلائی جہاز بن گیا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ چاند کے اس خطے کے نمونوں کے تجزیے سے سائنسدانوں کو چاند کی ارتقائی تاریخ اور اس کی تشکیل کے عمل کو سمجھنے میں مدد ملے گی۔ گہرائی میں جانے سے سمجھنے میں مدد ملے گی۔

بیان کے مطابق یہ نمونے نظام شمسی کی تشکیل کو سمجھنے میں بھی مدد کریں گے اور اس کے مطابق مستقبل کے مشنوں کی بنیاد رکھیں گے۔ Chang’e 6 لینڈر 2 جون کو چاند کے قطب جنوبی کے شمال مشرقی علاقے میں واقع ہے۔ قطب-آٹکن بیسن پر اترا۔ سطح سے نمونے اکٹھے کرنے کے بعد لینڈر نے چاند کے اس تاریک پہلو پر چینی پرچم لہرایا۔

یاد رہے کہ چاند کے اس حصے کو اندھیرا اس لیے نہیں کہا جاتا کہ وہاں روشنی نہیں ہے، بلکہ اس لیے کہ اس کے بارے میں کوئی تفصیلات نہیں ہیں، اس لیے اسے تاریک یا خفیہ کہا جاتا ہے۔ اور یہ شمالی چین پر اترے گا۔

چانگ ای 6 کے بعد چین چانگ ای 7 روبوٹک مشن چاند کے قطب جنوبی پر بھیجے گا۔ یہ مشن علاقے کے ماحول اور آب و ہوا کا جائزہ لینے کے ساتھ ساتھ وہاں برف کے آثار تلاش کرے گا۔ یہ چانگے مشن کے اختتام کو نشان زد کرے گا، جو ممکنہ طور پر وہاں ایک تحقیقی اسٹیشن قائم کرنے کے لیے بھیجے جائیں گے۔ چین 2030 تک چاند پر انسانوں کو اتارنے کا خواہاں ہے، جبکہ وہاں ایک اڈہ بھی قائم کر رہا ہے۔

مزید خبریں

FOLLOW US

Copyright © 2024 Roshan Pakistan News