چلتی ٹرین پر پتھر مارنے والے بچوں کے والدین کے خلاف کاروائی ہوگی ۔ریاض احمد توسال ایس پی ریلوے راولپنڈی

راولپنڈی(منصور ظفر)چلتی ٹرین پر پتھر پھینکنا اور ریلوے حدود میں غیر قانونی طور پر داخل ہونا قانونی جرم ہے۔مختلف مقامات سےگذرنے والی ریل گاڑی پربچےٹرین کوپھتر مارتے ہیں جس وجہ سےٹرین میں
سفرکرنےوالےمسافرمردوخواتین سمیت بزرگ شہری بھی زخمی ہو جاتے ہیں۔ریل گاڑی کا بھی ہزاروں کا نقصان ہوتا ہے۔ آئندہ ایسا ہوا تو بچوں کو گرفتار کر کے ان کے والدین کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی اس حوالے سے تمام ایس ایچ اوز ریلوے اسٹیشن اورریلوےچوکیاں پر انچارج کوسختی سے ہدایات جاری کر دی گئیں ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق چلتی ٹرین پر پتھر پھینکنا اور ریلوے حدود میں غیر قانونی طور پر داخل ہونا قانونی جرم ہے۔اس سلسلے میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ایس پی ریلوے پولیس راولپنڈی ریاض احمد توسال نے کہاہےکہ آئے روز چلتی ٹرین پر پتھر مارنے کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے جس کی وجہ سے مسافروں خواتین اوران کے ساتھ فیملیز بچے زخمی ہو رہے ہیں پھتر پھینکناایک سنگین جرم ہے اس سلسلے میں تمام ایس ایچ اوز چوکی انچارج کو آگاہ کر دیاگیا ہےایسے عناصر کے ساتھ سختی سے نمٹیں۔ اور قانونی کاروائی کرتے ہوئے مقدمات درج کرنے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔

مزیدلوگوں کومتنبہ کیاہے کہ مووٹرسائیکل سوار۔ موٹرکار۔ اور پیدل اشخاص نے ریلوے لائن کراس کرنامعمول بنا رکھا ہے ان کو ورننگ جاری کرتے ہوئے انھوں نے کہا والدین خود بھی اور اپنے بچوں کوریلوے لائن کراس کرنے سےروکیں ۔ایسے افراد جو کہ ریلوے ٹریک کے نزدیک رہتے ہیں وہ اپنے بچوں کو خاص طور پر اس سنگین جرم سے روکیں ورنہ ان کے خلاف بھی سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی ۔
ایس پی ریلوے ریاض احمد تو سال نے مزید کہا کہ علاقہ حدود کے اندر تمام انچارج مقامی افراد سے مل کر اعلانات بھی کروائیں ان کے بچوں کو ریلوے ٹریک کے قریب آنے سے منع کرکے اچھے شہری ہونے کا ثبوت دیں انہوں نے لوگوں میں آگاہی کے لیے مہم چلانے کی بھی ہدایات جاری کر دی ہیں۔عمل نہ کرنے کی صورت میں قانون کے مطابق بھرپور کاروائی عمل میں لائی جائےگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں