گورنمنٹ پاکستان کے ساتھ 10 فروری 2021 کو ھونے والے معاہدے پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔رحمان علی باجوہ

اسلام آباد ( سدھیر احمد ) سربراہ کور کمیٹی و چیف کواڈینیٹر آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ الائنس فیڈرل جناب رحمان باجوہ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ الائنس (آگیگا فیڈرل) کی طرف سے 12 مئی 2022 بروز جمعرات کو احتجاج کی تمام تر تیاریاں مکمل ہیں، اس احتجاج میں ہزاروں سرکاری ملازمین شرکت کریں گے۔ احتجاج 10 فروری2021 کو گورنمنٹ کے ساتھ ھونے والے معاہدے پر مکمل عملدرآمد، وفاق میں ہفتہ کی چھٹی کی بحالی اور پے اینڈ پنشن کمیشن کی شفارشات پیش کروا کر اس پر عملدرآمد کے لیے ہو گا۔ اس احتجاج میں وفاق کی تمام سرکاری تنظیمیں جن میں نیشنل سیونگز، پاکستان ریلویز کی تمام یونین، سی ڈی اے، پاک پی ڈبلیو ڈی، فیڈرل ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن ، ٹیچنگ اور نان ٹیچنگ اسٹاف یونین، پاکستان سپورٹس بورڈ، پریس انفارمیشن، واپڈا پیغام یونین، واپڈا ہائیڈرو یونین، پاکستان ملٹری اکاونٹس، اے جی پی آر، پاکستان پوسٹ آفسز کی تمام یونین، پینشنرز کی تمام تنظیمیں، انجینئر ز حضرات، اسٹیٹ آفس، پاکستان نے اتھارٹی، فیڈرل ہاؤسنگ فاؤنڈیشن، انجمن اساتذہ، اور قائدعاظم اسلامک یونیورسٹی اپنے ایمپلائز کے ہمراہ شرکت کریں گی۔
سرکاری ملازمین کا عظیم الشان احتجاج کل صبح یعنی 12 مئی 2022 فائنانس ڈویژن، کیو بلاک، پاک سیکریٹریٹ کے سامنے سے شروع ہو کر پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد کی طرف ریلی کی شکل میں جائے گا پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے سرکاری ملازمین کی طرف سے احتجاج ریکارڈ کرایا جائے گا۔
اپنے بیان میں رحمان علی باجوہ نے کہا کہ پہلے بھی آگیگا کا احتجاج پر امن تھا اور اب بھی پر امن احتجاج کیا جائے گا۔ نہ پہلے ھم نے حکومت کے خلاف بات کی تھی اور نہ اب کریں گے۔
ھر آنے والی حکومت کا ھم احترام کرتے ہیں۔ نہ پہلے سیاسی تھے اور نہ آئندہ کسی سیاسی جماعت کا حصہ بنیں گے
اپنے بیان میں رحمان باجوہ نے کہا کہ گورنمنٹ پاکستان کے ساتھ 10 فروری 2021 کو ھونے والے معاہدے پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے، اس لیے کہ سرکاری ملازمین ہی حکومتی مشینری کو چلاتے ہیں جب ان کے مسائل حل ہوں گے تو وہ زیادہ یکسوئی کے ساتھ اپنی پیشہ ورانہ زمہ داریاں ادا کر سکیں گے۔ اسی طرح تنخواہوں میں تفریق کے خاتمے کے لیئے بنائے گئے کمیشن کی سفارشات کو حتمی شکل دیتے ہوئے عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔ اس لیے کہ حکومت نے بار بار ہم سے یہ وعدہ کیا ہے کہ ہم تنخواہوں میں مساوات چاہتے ہیں اور اسی کے لیے پے اینڈ پنشن کمیشن قائم کیا گیا ہے۔اور مہنگائی کی تناسب سے پینشنرز کی پینشن میں خاطرخواہ اصافہ کیا جائے ہفتہ وار چھٹی وفاق کے سرکاری ملازمین کے لیے اہم ہے اس لیے کہ اسلام آباد کے بیشتر سرکاری ملازمین غیر مقامی ہیں ان کے کئی مسائل ہیں جو ہفتہ وار چھٹی سے حل ہو جاتے ہیں جبکہ وورکنگ آرز 5 دن میں بھی صرف گھنٹہ بڑھانے سے پورے ہو جاتے ہیں، وفاق میں بڑی تعداد میں خواتین ملازمین ہیں جن کی پیشہ ورانہ زمہ داریوں کے علاؤہ گھریلو بھی زمہ داریاں ہیں جو ہفتہ وار ایک چھٹی سے شدید متاثر ہوتی ہیں، ان کے بچے، گھر اور آفس سب متاثر ہو رہے ہیں۔ وفاق کے لاکھوں ملازمین کا مطالبہ ہے کہ ان تمام حقائق کی روشنی میں وفاق کے تمام سرکاری ملازمین کی ہفتہ وار چھٹی بحال کی جائے، تنخواہوں میں فرق کو ختم کیا جائے، تمام ایڈھاک ریلیف کو بنیادی تنخواہ کا حصہ بنایا جائے حسب وعدہ ٹائم اسکیل پرموشن و اپ گریڈیشن دی جائے تاکہ ملازمین اور حکومت کے درمیان بہتر ماحول میں تعاون برقرار رہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں