کون بنے گا پنجاب کا نیانگران وزیراعلیٰ؟

اسلام آباد(افشاں قریشی)قیاس آرئیاں ختم ہونے کو ہیں ،کون بنے گا پنجاب کا نیا نگران وزیراعلی فیصلہ آج بروز اتوار متوقع،پی ٹی آئی کے اعتراضات بھی سامنے آگئے۔نگران وزیراعلی پنجاب کے تقرری کے معاملے پر سیکریٹری الیکشن کمیشن کی زیر صدارت اہم اجلاس ہوا جس میں چاروں امیدواروں کی پروفائل تیار کی گئی،
ذرائع کے مطابق چاروں امیدواروں کی مکمل تفصیلات، سروس کیئریر کی تفصیلات تیار کر لیں، سیکرٹری الیکشن کمیشن اتوار 22 جنوری کو چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت اجلاس میں پروفائل پیش کریں گے۔
ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ سیکرٹری الیکشن کمیشن اجلاس میں چاروں نامزد امیداواران کے بارے میں بریفنگ بھی دیں گے، جس کے بعد اجلاس میں نگراں وزیراعلیٰ کے تقرر کے لیے کسی ایک نام کی منظوری دی جائے گی۔ چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت اجلاس کل شام 7 بجے الیکشن کمیشن میں ہوگا۔
دوسری جانب پی ٹی آئی نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن اگر غیر جانبدار نگران وزیر اعلی مقرر نہیں کرتا تو عدالت سے رجوع کیا جائے گا، محسن نقوی کے حوالے سے پی ٹی آئی کی پارلیمانی کمیٹی کے دو ارکان نے تحریری اعتراض الیکشن کمیشن میں جمع کروادئیے ہیں۔
بیرسٹر علی ظفر نے کہا کہ آئین میں واضح ہے کہ نگراں وزیراعلیٰ کی تقرری غیر جانبدارانہ ہونی چاہیے اور اُس کا کسی بھی پارٹی سے تعلق نہیں ہونا چاہیے۔
قبل ازیں حکومتی اتحاد کی جانب سے احمد نواز سکھیرا اور نوید اکرم چیمہ کے نام تجویز کیے گئے ہیں۔ اپوزیشن نے محسن رضا نقوی اور احد چیمہ کو نامزد کررکھا ہے۔ واضح رہے کہ الیکشن کمیشن سیکرٹریٹ آج اور کل کھلا رہے گا جب کہ تمام ملازمین کو ہفتہ اور اتوار کے روز دفتر آنے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔
حکومت اور اپوزیشن کے درمیان اتفاق نہ ہونے کے بعد نگراں وزیراعلیٰ کا معاملہ 6 رکنی پارلیمانی کمیٹی کو گیا تھا، جو تقرری میں ناکام رہی تو پھر یہ معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس چلا گیا ہے۔ آئین کے آرٹیکل 224 اے کے تحت نگراں وزیراعلیٰ کے تقرر کا فیصلہ اب الیکشن کمیشن کرے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں