مری، کوٹلی ستیاں ، ہزارہ اور آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والے نمائندہ افراد کا مشاورتی اجلاس

مری(انس بن وقار)مری، کو ٹلی ستیاں،ہزارہ اور آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والے نمائندہ افراد کا مشاورتی اجلاس گذشتہ روز نامور سیاسی و سماجی شخصیت محمد سفیان عباسی کی زیر صدارت منعقد ہوا، جس میں بڑی تعداد میں خطہ کوہسار سے تعلق رکھنے والے نمایاں دینی،سیاسی، سماجی شخصیات سمیت معززین علاقہ نے بڑی تعداد میں شر کت کی، اجلاس میں راولپنڈی ، اسلام آباد میں مری ، کو ٹلی ستیاں ، ہزارہ اور آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والے افر اد اور ان کو درپیش مسائل اور ان کے حل کے لیے تمام شر کاء کی مشاورت سے کو ہسار یونائیٹڈ فرنٹ کے نا م سے غیر جماعتی فورم کے قیام کا باضابطہ اعلان کیا گیا۔اس مو قع پر منعقدہ تقریب سے تاجر رہنما راج عباسی ، نواز عباسی ، عقیل عباسی ، ممتاز مذہبی اسکالر مولانا فخر السلام سیفی ، سجاد الحسن عباسی ،حنان عباسی ، بابر ستی، نسیم عباسی ، سردار عبدالشکور ، سجاد احمد عباسی ، شبیر عباسی ، وحید عباسی ، افتخار چھوٹو ، طفیل عباسی ، جلیل اختر عباسی ایڈوکیٹ ، انس بن وقار عباسی ، خطیب الرحمن عرف منا ، ، زاہر ستی ، کامران عباسی ، شاہد عباسی ، خالد مرزا، شفقت عباسی، شبیر عباسی عبید الرحمن عباسی ، نوید عباسی ، محمد نسیم نون ، سعید عباسی ، حاجی عبدالحمید ، یاسر مجید ستی، فیصل عباسی سمیت مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد نے شر کت کی۔ اس موقع پر شر کاء سے گفتگو کر تے ہوئے محمد سفیان عباسی نے کہا راولپنڈی اسلام آباد میں مقیم لاکھوں اہلیان کوہسار گوں ناگوں مسائل کا شکار ہیں ان کے مسائل کے حل کے لیے اس غیر جماعتی فورم کا قیام عمل میں لایا گیا ہے، میں تمام دوستوں سے اپیل کر تا ہوں کہ وہ ہر طر ح کے سیاسی علاقائی خاندانی تعصب سے بالاتر ہوکر عوامی حقوق کی اس تحریک میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں، انھوں نے کہا بھارہ کہو، غوری ٹاون، لہتراڑ روڈ، پنڈوریاں اور دیگر علاقے بے پناہ مسائل کا شکار ہیں، اسی طر ح اہل علاقہ گیس ، بجلی کے میٹرز کے حصول اور تھانے کچہری کے مسائل اور قبضہ مافیہ کے مظالم کا شکار ہیں ، کوہسار یونائیٹڈ فرنٹ کے پلیٹ فارم سے ہم ان تمام مسائل کے حل کے لیے منظم ہو کر جدو جہد کر یں گے سفیان عباسی نے اہلیان مری کے حقوق کی جدو جہد بھی جا ری رہے گی مر ی میں گیس اور بلک واٹر سپلائی کے منصو بوں کو پایا تکمیل پہچانے کے لیے بھی عوامی جدو جہد ہمارے ایجنڈے کا حصہ ہے، بھارہ کہو بائی پاس منصوبے کو سٹے کروانے پر اپنی تشویس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے کو جلد دوبارہ شرو ع کروانے کے لیے عوامی اور قانونی جدو جہد کا آغاز بھی کر دیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں