خودکشی یا قتل والدہ ونیتا شرما کے انکشافات

ممبئی(روشن پاکستان نیوز) بھارتی ٹیلی ویژن کی آنجہانی اداکارہ تونیشا شرما کی والدہ ونیتا شرما نے کہا ہے کہ ان کی بیٹی کی جان بچائی جاسکتی تھی۔
تونیشا شرما کی والدہ نے ان کی آنجہانی بیٹی کے ساتھ ٹی وی ڈرامہ سیریل میں کام کرنے والے اداکار شیزان خان پر الزام عائد کیا کہ وہ تونیشا کو ایک ایسے ہسپتال لے گئے تھے جو بہت دور واقع تھا۔ان کا کہنا تھا کہ جب تونیشا کو ہسپتال لے جایا جارہا تھا تو وہ سانس لے رہی تھی اگر قریبی ہسپتال لے جاتے تو وہ بچ سکتی تھی۔ان کے مطابق قریبی ہسپتال اس ڈرامے کے سیٹ سے چند منٹ کے فاصلے پر تھا۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ونیتا شرما نے کہا کہ ان کی اپنی بیٹی بہت دوستی تھی،میڈیا سے گفتگو کے دوران انہوں نے آنجہانی بیٹی کی ایک وائس میسیج بھی پلے کر کے سنوائی۔
واضح رہے کہ 21 سالہ تونیشا شرما نے مبینہ طور پر اپنی موت سے 15 روز قبل شیزان سے مراسم ختم ہوجانے پر 24 دسمبر 2022 کو بھارتی ٹی وی کے سیریل ’علی بابا، داستان کابل‘ کے سیٹ پر خودکشی کرلی تھی۔جس کے بعد ممبئی پولیس نے شیزان خان کو خودکشی میں اعانت کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا تھا اور اس وقت شیزان جوڈیشل کسٹڈی میں ہیں۔
ونیتا شرما کا کہنا تھا کہ یہ خودکشی یا قتل ہوسکتا ہے،ایسا میں اس لیے کہہ رہی ہوں کیونکہ شیزان اسے ایک بہت دور واقع ہسپتال لے گیا تھا۔انہوں نے سوال اٹھایا کہ سیٹ سے چند منٹوں کی مسافت پر ہسپتال موجود تھا تو پھر وہ اسے اتنی دور کیوں لے گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں