مقتول صحافی جمال خاشوجی کی منگیتر کا جسٹن بیبر سے اپنا کنسرٹ منسوخ کرنے کا مطالبہ

لاہور (صبیح ذونیر )مقتول صحافی جمال خاشوجی کی منگیتر ہیٹیس جینگز نے جسٹن بیبر سے اگلے ماہ سعودی عرب میں ہونے والا اپنا کنسرٹ منسوخ کرنے کا مطالبہ کر دیا۔
کینیڈین گلوکار ان ستاروں میں شامل ہیں جو جدہ میں مملکت کے پہلے فارمولا ون ریس گرینڈ پرکس میں پرفارم کریں گے۔
ہیٹیس جینگز نے بیبر کو واشنگٹن پوسٹ کے ذریعےایک کھلا خط لکھا جس میں ان پر زور دیا گیا کہ وہ اپنا کنسرٹ منسوخ کر کے ایک طاقتور پیغام بھیجیں۔ انہوں نے صاف الفاظ میں کہا کہ ”میرے پیارے جمال کے قاتلوں کے لیے گانا مت گانا”۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیبر کے پاس یہ ظاہر کرنے کا منفرد موقع ہے کہ اُس کا نام اور ہنر کسی حکومت کی ساکھ کو بحال کرنے کے لیے استعمال نہیں کیا جائے سکتا۔

جسٹن بیبر 5 دسمبر کو F1 ریس میں پرفارمینس کے لیے تیار ہے، جس میں روکی، ڈیوڈ گویٹا اور جیسن دیرولو بھی پرفارم کریں گے۔ ہیومن رائٹس واچ نے بھی بیبر اور دیگر فنکاروں سے F1 کنسرٹس سے دستبرداری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان تقریبات کا مقصد سعودی عرب کے انسانی حقوق کے ریکارڈ سے توجہ ہٹانا ہے۔

سعودی حکومت کے ممتاز صحافی خاشوجی کو اکتوبر 2018 میں استنبول میں اس کے قونصل خانے میں قتل کر دیا گیا تھا۔ وہ وہاں اپنی شادی کے لیے دستاویزات لینے گئے تھے۔ امریکی انٹیلی جنس رپورٹ سے پتا چلا ہے کہ سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے جمال خاشوجی کے قتل کی منظوری دی تھی۔ ولی عہد شہزادہ نے تاہم بار بار اس میں ملوث ہونے کی تردید کی ہے۔ 59 سالہ صحافی کسی زمانے میں سعودی حکومت کے مشیر اور شاہی خاندان کے قریبی رہ چکے ہیں لیکن وہ اس کے حق میں نہیں نکلے اور 2017 میں امریکا میں خود ساختہ جلاوطنی اختیار کر گئے۔
جسٹن بیبر پہلے پاپ اسٹار نہیں ہیں جنہیں سعودی عرب میں کنسرٹ سے دستبردار ہونے کے لیے دباؤ کا سامنا ہے۔ 2019 میں، ریپر نکی مناج نے خواتین اور LGBT حقوق کے لیے اپنی حمایت کا حوالہ دیتے ہوئے جدہ میں ایک طے شدہ پرفارمنس منسوخ کر دی تھی۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ جسٹن بیبر کا ردعمل کیا ہو گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں