فیڈرل گورنمنٹ سکول ملپور میں شدید گرمی اور حبس پچیس معصوم بےہوش اور علیل

اسلام آباد(منصور ظفر)اسلام آباد کے نواحی علاقے ملپور کےفیڈرل گورنمنٹ سکول میں صبح سے بجلی نہ ہونے کے باعث بچے بے ہوش ہو گئے۔
بے ہوش ہونے والوں بچوں کی کل تعداد 25 ہے ،شدید گرمی
کی وجہ سے بچوں کےناک سے خون آنا شروع ہو گیا جس بنا ان
بچوں کے سر پر پانی ڈال کر خون کو روکنے کی کوشش بھی کی گئی ہے ۔
محکمہ واپڈا کی ازلی بے حسی ننھے معماروں کے لیے جان لیوا ثابت ہونے لگی مگر واپڈا کو اطلاع دیے جانے کے باوجود بجلی کی بندش بحال نا ہو سکی ۔
بچوں کو طبی امداد دینے کے لیے نزدیک کے اہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے ۔
اسلام آباد کے متعدد علاقوں میں بڑھتی ہوئی گرمی کے باعث واٹر ٹیبل سطح زمین کی نچلی سطح تک جاپہنچا پینے کے پانی کی قلت شدت اختیار کرنے لگی
واضح رہے ناقدین اور سکول ذرائع کے مطابق ان بچوں کو ویکسین لگانے کے لیے سکول کھولے گئے ہیں اور ان کے مطابق دوسری طرف بچوں کے والدین سے فیس ہڑپ کرنے کو تعلیمی اداروں کو کھولا گیا ہے ان کا کہنا ہے یہ کہاں کا انصاف ہے ہم بچوں کی سکول فیس کو بھریں دیگر اخراجات بھی بھریں اور اب کرونا بیماری کے دوران ایسے ناقص انتظامات کی وجہ سے ہمارے بچے سکول میں بے ہوش اور بیمار پڑنے لگے ہیں۔زرائع کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کچھ پرائیوٹ سکولز نے لاک ڈاون کے دوران چھوٹے بچوں کے امتحانات بھی لیے ہیں اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے حکومت کو دباو میں لایا گیا اور وزرات تعلیم کی ناقص پالیسیوں کا منہ بولتا ثبوت یہ پچیس بچے ہیں جو غفلت اور لاپرواہی کی وجہ سے بے ہوش اور علیل ہوے۔
والدین نے ضلعی انتظامیہ اور حکام بالا سے موجود ہ صورت حال کو پیش نظر رکھتے ہوے بچوں کی گرمی اور حبس کی وجہ سے جو حالت بنی اس کا سخت ترین نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں